کامیاب لوگوں کی صبح کی عادتیں morning habits ameer logon ki

کامیاب لوگوں کی صبح کی عادتیں morning habits ameer logon ki

              ایک واقعہ اپنا مضمون شروع کرنے سے پہلے سناتا ہوں جو آپ کو حوصلہ افزا کریگا۔ ایک شخص تھا جو اچھے سے اپنی زندگی گزاررہا تھا۔ پھر اچانک ایک دن کام سے آتے ہوئے اس کا ایکسیڈنٹ ہوگیا جو بہت سیریس تھا ۔ اس کی ٹانگ اور ہاتھ ٹوٹ گئے اور وہ مرتے مرتے بچا۔ یہاں تک کہ کچھ دن کومہ میں بھی رہا لیکن پھر اس کو ہوش آیا تو ڈاکٹر نے بتایا کہ اس کا برین ڈیمج ہوگیا ہے اب وہ وہیل چیئر کے بغیر نہیں چل سکتا۔

             اب یہ سن کر وہ کافی افسردہ ہوا اور برا فیل کیا کہ یہ کیا ہوگیا میرے ساتھ لیکن بس کچھ دیر تک اس کا ماننا تھا کہ اگر لائف میں کچھ برا ہوجائے تو بس کچھ دیر کیلئے ہی غم کرو زور زور سے رو چلاؤ لیکن پھر نارمل ہوکر آگے کی سوچو کیونکہ اب جو ہونا تھا وہ ہوگیا اب اس نے یہ ہی کیا اور آگے کی سوچنے لگا کہ اب کیا کرنا ہے۔

             اب اس نے اپنے سارے غم اور دکھ کو اپنے اندر سے ختم کردیا اور خوش رہنے لگے۔ اپنے اس رویہ سے اس نے اتنی جلدی صحت یابی حاصل کی کے ڈاکٹرز بھی حیران رہ گئے اور اس نے ڈاکٹر کو بھی غلط ثابت کیا اور کچھ عرصے میں چلنا بھی شروع کردیا۔اب وہ بلکل ٹھیک ہوگیا اور اپنی نارمل زندگی میں واپس آگیا۔ اس کے بعد وہ اور زیادہ اعتماد کے ساتھ اپنے کام پر آیا اور پہلے سے بہتر کام کرکے سب کو حیران کردیا۔

            اب اس نے اپنی کچھ عادات کو اپنی لائف کا حصہ بنالیا جو بہت فائدہ مند تھیں اور یہی ذکر کرنا مقصد ہے۔

جاگنگ

            دیکھو کہا جاتا ہے کہ جو اپنی صبح کو جیت لیتا ہے وہ اپنے پورے دن کو جیت لیتا ہے۔ اور یہ حقیقت بھی ہے کبھی آپ نے اس کاتجربہ نہیں کیا ہوگا۔ لیکن ایک دفعہ کرکے ضرور دیکھو بہت مزہ آئیگا اور پورا دن تازہ تازہ رہوگے۔دیکھو یہ عادتیں اگر آپ کرتے ہیں تو آپ کو اندر سے ایک خوشی کا احساس ہوگا یہ اس کا ایکسٹرا فائدہ ہے فزیکل فائدے تو الگ ہیں جو آپ بھی سمجھتے ہیں۔

مراقبہ 

            مراقبہ ایک ایسی چیز ہے جسے بڑے بڑے کامیاب لوگ اپنی کامیابی کی وجہ مانتے ہیں۔ اور اس کو صبح ایک بہت ضروری چیز سمجھ کر کرتے ہیں۔ یہ ایک حقیقت بھی ہے آپ اس کو مستقل مزاجی سے ایک ہفتہ بھی کرلیں تو یہ آپ کے کام کی پرفارمنس کو بڑھادیگا۔ یہ کامیابی میں بہت اہم کردار ادا کرتا ہے۔

اپنے آپ کو مثبت ہونے کی ہدایات دینا

            آپ روز صبح کو اپنے آپ سے یہ کہیں کہ کچھ بھی ہو کیسی بھی سچویشن ہو مجھے مثبت رہنا ہے۔ تو جب ایسا بار بار کہتے ہیں اور روز کہتے ہیں تو دماغ اس چیز کو تسلیم کرلیتا ہے اور آپ کو کسی بھی خراب سے خراب سچویشن میں بھی منفی ہونے نہیں دیتا۔ یہ چیز آپ کی صلاحیتوں کو چار چاند لگادیتی ہیں۔

ورزش   exercise

            ورزش کے بارے میں آپ کو کہنے کی کوئی ضرورت نہیں وہ آپ بہت پہلے سے بہت اچھی طرح جانتے ہو تو اس کو بھی لازم پکڑو۔

اپنا اعتماد بڑھائیں

اپنی ذات کی خوبیاں

تخلیقی شخص مار نہیں کھاتا

بک پڑھنا

           یہاں میری مراد نیوز پیپر پڑھنے سے نہیں ہے جو آپ روز پڑھتے ہیں اور کچھ مثبت کچھ منفی  خبروں سے اپنے آپ کو کچھ ٹینشن اور کچھ اچھا محسوس کرواتے ہیں۔ یہاں اس سے مراد کوئی کتاب جو کردار سازی  سیلف  موٹیویشن سے متعلق ہو اس کا کچھ حصہ  پڑھنا ہے۔ جو آپ کو حوصلہ دیگی دن کے معاملات  حل کرنے میں۔ 

لکھنا   writing

             یہ عادت آپ کے بہت کام آنے والی ہے۔ دیکھو روز آپ کے مائنڈ میں نئے اور اچھے خیالات آتے ہیں اور چلے بھی جاتے ہیں۔ کچھ اتنے اچھے ہوتے ہیں کے ان پر عمل کرنے کا دل کرتا ہے یا کسی سے شئر کرنے کا دل کرتا ہے۔ پھر ایسا ہوتا ہے کہ ٹائم نہیں ہوتا اور آپ کام میں بزی ہوجاتے ہو۔ اور آخر وہ بات یا آئیڈیا ذہن سے نکل جاتا ہے اگر یہ آپ لکھ لو تو ایسی کتنی اچھی باتیں اور آئیڈیاز جو آپکے مائنڈ میں آتے ہیں۔ آپ کو یا دوسرے کو فائدہ دیسکتے ہیں۔ اسلئے لکھنے کی عادت ڈالو۔

امید ہے یہ مضمون آپ کو پسند آیا ہوگا تو لائک اور شئر ضرور کریں۔ شکریہ

اپنا اعتماد بڑھائیں apna confidence increase kren

اپنا اعتماد بڑھائیں apna confidence increase kren

            دوستو آج کا موضوع بہت اہم ہے جو خود اعتمادی پر ہے۔ آپ اپنی ذاتی ترقی سے لیکر اچھا ذمہ دار شہری بننے تک سب میں ایک چیز ضروری ہے وہ ہے اعتماد۔ آپ کا اعتماد بتاتا ہے کہ آپ کتنا آگے جاسکتے ہو یا کتنا اچھا تعلق اپنے آس پاس کے لوگوں سے قائم رکھ سکتے ہو۔ یا کیا کیا اپنی لائف میں نیا کرسکتے ہو یہ سب آپ کے اعتماد پر منحصر ہوتا ہے۔

            آج اسی پر بات کرینگے کہ کیسے آپ اپنا اعتماد بڑھاکر اپنے آپ کو بہتر کرسکتے ہو اور اپنی لائف میں کامیابی اور امپروومنٹ لاسکتے ہو۔ آپ کی اپنے بارے میں کیا سوچ ہے کیا احساسات ہیں یہ سب فیصلہ کرتے ہیں آپ کی ترقی اور بہتر لائف کا۔

اپنا علم بڑھاؤ

            دیکھو یارو آپ کا کسی چیز پر علم کم ہوگا تو آپ اس چیز یا شخص کے بارے میں زیادہ اعتماد سے بات نہیں کرپائینگے اور اگر کر بھی لی تو آگے چل کر غلط ہونے کا امکان ہے۔ جو آپ کو لوگوں کے سامنے شرمندہ کراسکتا ہے۔ اور لوگوں کا بھروسہ بھی آپ پر سے اٹھ جائیگا کہ یہ شخص سہی بات نہیں کرتا۔

             اس لئے آپ کو اس بارے میں خاموش رہنا چاہئے جس بارے میں علم نہ ہو۔ اور پھر اس پر اپنا علم بڑھانا چاہئے۔ ویسے بھی ہر انسان ہر موضوع پر بات نہیں کرسکتا یہ وہ ہی کرتا ہے جو بس بے تکان بولنے کا عادی ہوتا ہے۔ زیادہ بولنا آپ کی شخصیت کو گہنا دیتا ہے۔

سچ ہی بولو

            ہمارا دین اسلام بھی اس کی بہت ترغیب دیتا ہے اور اسلام کا ہر ہر حکم انسان کے اپنے فائدے کیلئے ہے۔ سچ بولنا آپ کی لوگوں میں عزت بڑھادیگا اور جب لوگ آپ کی عزت کرینگے تو آپ کے اعتماد میں بھی اضافہ ہوگا۔ جھوٹ انسان کی شخسیت کو داغدار کردیتا ہے۔ جھوٹے انسان کے دل میں چور ہوتا ہے۔ اور سچا انسان صاف دل کا ہوتا ہے کسی بھی کا ڈر اسکے دل میں نہیں ہوتا۔ اس لئے جب وہ بات کرتا ہے تو اعتماد سے اور پرتاثیر لہجے میں بات کرتا ہے۔

اللہ پر ایمان

              یار آپ اللہ پر اعتماد اور بھروسہ بڑھاؤ اور تعلق مضبوط کرو اللہ سے پھر آپ کے اندر ایک عجیب سا اعتماد اور بے خوفی پیدا ہوجائیگی۔ جو آپ سے وہ بڑے بڑے کام کرالیگی کہ جب آپ بعد میں سوچوگے تو اپنے آپ پر حیرانی ہوگی کہ یہ کام میں نے کئے ہیں؟  

دماغ کو حال میں حاضر رکھیں

            دیکھو دماغ کا حاضر رہنا بہت ضروری اور اہم ہے۔ ہم اپنا ذہن حال میں رہتے ہوئے کہیں اور لیجاتے ہیں۔ سوچوں کا محور خیالی دنیا ہوتی ہے اور اس میں پتہ ہی نہیں چلتا کے دن کہاں گیا کب ٹائم پاس ہوا۔ اس کے برعکس اگر آپ کسی نئی جگہ جاتے ہیں تو آپ کو وہاں بہت کچھ نیا دیکھنے کو ملتا ہے ۔ جسکی وجہ سے آپ کا دماغ حال میں ہی حاضر رہتا ہے اور اسی وجہ سے آپ کو دن کچھ بڑا اور لنبا محسوس ہوتا ہے۔ کیونکہ اس وقت آپ کو دن گزرنے کا پتہ چل رہا ہوتا ہے۔

             یعنی اگر آپ دماغ حاضر رکھتے ہیں تو آپ کو ایک ایک پل گزرنے کا احساس ہوتا ہے۔یہ چیز ہمیں اپنے اندر لانے کی ضرورت ہے جو اعتماد کو بڑھاتی ہے اور آج میں فوکس کرکے بہت سے نئے نئے کام کروانے کیلئے اکساتی ہے۔ اگر آپ حاضر نہیں ہیں تو آج میں ہونے والے واقعات سے تجربہ کیسے لینگے اور اپنے آپ کو یا گھر والوں کو بہتر ٹائم کیسے دینگے؟

خود جیسے ہو ویسا مانو

            دیکھو اس بات کا مطلب یہ ہے کہ جیسے ایک لڑکا ہے جو ابھی جوانی کی دہلیز پر قدم رکھ رہا ہے۔ اور اس کو ان پمپلز اور دانوں کا سامنا ہے جو اس موقع پر چہرے پر نکلتے ہیں۔ اب وہ اس سے بہت پریشان ہوجاتا ہے۔ اور سب سے چھپتا پھرتا ہے۔ یہ ماننے کو تیار نہیں کہ یہ ایک فطری چیز ہے جو وقت کے ساتھ ٹھیک ہوجاتی ہے۔

           یہی بات آپ کو سمجھ کر چلنی ہے کہ جیسے آپ ہو اسی میں پراعتماد رہو ۔ زبردستی اپنے آپ کو تبدیل کرنے کی کوشش نہ کرو یہ آپ کو اور زیادہ پریشان اور اعتماد سے کردیگی۔ بس جیسے آپ ہو اسی میں لوگوں میں گھل مل کر رہو اور جو آپ سے دور جانے کی کوشش کررہا ہے اس کی ٹینشن نہ لو۔

            دیکھو یہاں ایک اہم بات یہ کہ آپ جو تبدیل کرسکتے ہو تو ضرور کرو یا اس کیلئے کوشش کرو ۔ اور جو نہیں کرسکتے اس کو مان لو۔ جیسے آپ کا وزن زیادہ ہے تو اس کو آپ اپنے ایکشن سے کم کرسکتے ہے۔ لیکن اگر آپ کا قد چھوٹا ہے اور آپ عمر کے اس حصے میں آچکے ہو جب قد کا بڑھنا رک جاتا ہے تو اب اس کو مان لو اور فضول ادویات میں اپنا ٹائم،پیسہ اور ذہن برباد نہ کرو۔

اعتدال

             دیکھیں دو طرح کے لوگ ہیں ایک غصہ والے اور دوسرے بہت نرم طبیت۔ اب غصے والے سے لوگ دور رہتے ہیں کیونکہ وہ کسی بھی خراب صورتحال میں چیخنے چلانے لگتے ہیں اور بد اخلاق ہوجاتے ہیں گالیاں دینے لگتے ہیں۔ جبکہ نرم مزاج کا لوگ فائدہ اٹھاتے ہیں اور ان کی بات کو زیادہ نہیں توجہ دیتے۔ یہ دونوں ٹھیک نہیں  اب آپ کو کیا کرنا ہے؟

            آپ کو اعتدال کی راہ اختیار کرنی ہے یعنی جب آپ کے مزاج کے خلاف صورحال ہو تو ٹھنڈے دماغ سے یا موقع کی مناسبت سے کچھ سختی سے معاملے کو ہیندل کرنا ہے۔ اور جب لوگ آپ کو نرم مزاج اور چپ رہنے والا سمجھ کر فائدہ اٹھانے کی کوشش کریں تو ان کو بھی اعتماد اور پیار سے انکار کردینا ہے۔ اگر اس معاملے میں آپکا کوئی نقصان ہے تو۔ اگر نہیں تو آپ چاہیں تو اپنی خوشی سے سامنے والے کی مدد کرسکتے ہیں۔یہ رویہ آپ کا اعتماد اور لوگوں میں عزت کو بڑھائیگا۔

اپنی ذات کی خوبیاں

اپنی بات سمجھانا

دھوکا کون کھاتے ہیں

ڈر   fear

             یہ بھی ایک چیز ہے جو آپ کو کچھ اچھا اور نیا کرنے سے روکتی ہے۔آپ کو پتہ ہوتا ہے کہ اس کام میں مجھے فائدہ ہے اور اس سے میں ترقی کرسکتا ہوں۔ لیکن پھر اندر کا ڈر آپ کو وہ کرنے سے روک دیتا ہے کہ ناکام ہوا تو کیا ہوگا لوگ کیا کہینگے۔ پیسوں کا نقصان ہوگا وہ الگ وغیرہ۔ 

             یاد رکھیں کہ جس کام یا عمل سے ڈر لگتا ہے وہ کام کرنے سے ہی وہ ڈر آپ کے اندر سے نکلتا ہے۔ اور بار بار کرنے سے پوری طرح ختم ہوجاتا ہے۔ آپ اگر بائیک چلاتے ہیں تو آپ کو یاد ہوگا کہ سب سے پہلے آپ نے بائیک چلائی تو آپ اتنے پر اعتماد نہیں تھے۔ لیکن پھر دوبارہ چلائی تو آپ کا ڈر کم ہوچکا تھا اور اب آپ بلکل بے خوف اور اعتماد سے بائیک چلاتے ہیں۔ یہ اس بات کی دلیل ہے کہ جس کام سے ڈر لگتا ہے وہی کام کرنے سے انسان کا اعتماد بڑھتا ہے۔

اپنی ذمہ داری اٹھانے کی کوشش کرو

             اگر آپ کسی بھی ٹینشن والی صورتحال سے بھاگنے کی کرتے ہو تو یقین کرلو جیسے آپ آج ہو اگلے پچاس سال میں بھی ایسے ہی رہنے والے ہو۔ مطلب یہ کہ کوئی بھی صورتحال ہو آپ کی اپنی وجہ سے یا کسی اور کی وجہ سے اس پر توجہ دیکر اپنے دماغ اور لوگوں کے مشورے سے حل کرنے کی کوشش کرو۔ یہ آپ کو ہر صورتحال سے نمٹنے کا حوصلہ دیگی اور کسی بھی صورتحال میں آپ نارمل رہوگے۔ کیونکہ ایسی  صورتحال کا سامنا کرکرکے آپ نے اپنے آپ کو مضبوط کرلیا ہوتا ہے۔

اپنی ذات میں خوبیاں بڑھائیں apni zaat mein khubi barhain

اپنی ذات میں خوبیاں بڑھائیں apni zaat mein khubi barhain

            دوستو آپ اپنی ذات میں خوبیاں بڑھائیں اپنے کھاتے میں خوبیاں جمع کریں جیسے پیسے جمع کرتے ہیں۔ اس کا رزلٹ بہت اچھا ہوگا آپ کیلئے۔ یہ خود ہی آپ کو بڑا بنادینگی اور آپ کو پتہ ہی نہیں چلیگا۔ گھر جب بنتا ہے جب اس میں اینٹیں وغیرہ لگائی جاتی ہیں لیکن اگر اینٹیں غیر معیاری لگادیں تو۔۔۔ اچھا خوبصورت گھر بنانے کیلئے اچھی اینٹیں اور معیاری سازوسامان چاہئے۔ یہی اصول آپ اپنے اوپر لاگو کرلیں تو کام آسان ہے ۔

             بزرگ کہتے ہیں کہ کتا پالنا بلی پالنا یا شیر کا بچہ پالنا آسان ہے۔ لیکن ایک اچھا انسان بننا دنیا کا مشکل کام ہے۔ اور اس سے زیادہ مشکل اس اچھی خوبیوں پر جمے رہنا ہے۔ یار آپ یہ سب کرسکتے ہیں اگر کوشش کریں بار بار کریں سو دفعہ ناکام ہوں لیکن اچھی بات کا اپنانا نہ چھوڑیں۔ نماز اگر آپ شروع کرتے ہیں تو بس گرتے پڑتے ہی سہی لیکن پکڑ کر رکھیں ایک وقت میں وہ خود آپ کو مستقل نمازی بنادیگی۔ 

اپنی بات سمجھانا سیکھیں

لوگوں سے کام نکلوانا

علم کس کا ہے؟

            ایک اور اہم بات کے آپ سچ،اخلاق،نماز،حیا شرم،صبح جلدی اٹھنا اور دوسری اچھی خوبیاں جب اپناؤگے جب آپ کا ان سب پر ایمان اور یقین پکا ہوگا کہ یہ مجھے لازمی فائدہ دینگی۔ اگر آپ کا یقین ہی مضبوط نہیں تو عمل خود ہی کمزور پڑجاتا ہے۔اگر آپ کو کوئی کہے کے آگ میں کود جاؤ تو آپ ایسا نہیں کروگے کیونکہ آپ کو یقین ہے کہ یہ غلط ہے اور نقصان دہ ہے۔ اسی طرح اس پر بھی یقین کرلیں کہ یہ سب اچھی خوبیاں ہیں اور فائدہ مند ہیں تو آپ کیلئے اپنانا آسان ہوجائیگا۔

             دیکھیں لوگ جیسے ہیں آپ کو بھی ایسا ہی دیکھنا چاہتے ہیں یہ حقیقت ہے اگر کوئی جھوٹا ہے اسکی سو دلیلیں دیگا کوئی صبح دیر سے اٹھتا ہے اس کی بھی سو دلیل دیگا کہ جلدی اٹھنے کا کیا فائدہ انسان کو اپنے ٹائم سے ہی مرنا ہے؟ اب بتائیں یہ ہے کوئی کرنے والی بات اللہ کے بندوں مرنا اپنے ٹائم سے ہے لیکن اس سے یہ کب ثابت ہوتا ہے کہ اچھی خوبیاں سائیڈ پر ڈال دو ؟ ایسا صرف کمزور ارادے والے کہتے ہیں۔ آپ کو ان سب کی باتوں کو نظر انداز کرکے چلنا ہے۔

عام طور پر کون دھوکا کھاتے ہیں dhoka kon khate hen

عام طور پر کون دھوکا کھاتے ہیں dhoka kon khate hen

             آپ نے کبھی دھوکا کھایا ہے؟ اکثر کا جواب ہاں میں ہوگا۔بلکہ کچھ لوگ تو بار بار بھی دھوکا کھاجاتے ہیں۔ اب ایسا کیوں ہوتا ہے اس مضمون میں جان لیتے ہیں۔ کچھ میجر وجوہات ہیں دھوکا کھانے کی اگر آپ ان کو سمجھ جائیں تو  آپ کے دھوکا کھانے کے چانس بہت ہی کم یا ختم ہوجاتے ہیں۔

آپ سادہ ہیں

             یہاں مراد آپ کے کم معاملہ فہم ہونے کی ہے۔ دیکھیں آپ اگر سادہ زندگی گزارتے ہیں تو بہت اچھی بات ہے۔ لیکن اگر آپ معاملہ سمجھنے میں سادہ ہیں تو اس کو ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے۔ آپ کسی پر فوراََ بھروسہ کرلیتے ہیں تو یہ ٹھیک نہیں اور اگر آپ بلکل بھی کسی پر بھروسہ نہیں کرتے تو یہ بھی ٹھیک نہیں۔ ان دونوں کے درمیان اعتدال رکھنے کا نام سمجھداری ہے۔ یعنی آپ پہلے معاملہ سنتے ہیں دیکھتے ہیں پھر اپنے دماغ میں تجزیہ کرتے ہیں یا مشورہ کرتے ہیں پھر اس کے بعد فیصلہ کرتے ہیں۔

لالچ

             دھوکا کھانے کی ایک بڑی وجہ لالچ بھی ہے۔ اب یہ تو آپ جانتے ہی ہیں کہ لوگ یا کمپنیز کیسے لوگوں کو سبز باغ دکھاکر پیسہ بٹورتی ہیں پھر نظر بھی نہیں آتیں۔ ماضی میں اسکی کئی مثال ہیں جن میں ایک ڈبل شاہ کی ہے جس نے لوگوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا۔ 

             اب جیسے ایک ٹائم میں جعلی مسجز کے ذریعے لوگوں نے بڑے فراڈ کئے کے آپ کا یہ انعام نکلا ہے یا اتنے پیسے آپ کو بینظیر انکم سپورٹ سے نکلے ہیں۔ اب انکو آپ تک پہنچانے کیلئے کچھ فیس لگے گی۔ اب لوگ بنا سوچے سمجھے پیسے ایزی پیسہ کردیتے تھے۔ جو لالچ کی وجہ سے تھا۔ دھوکا دینے والے اسی کمزوری کا فائدہ اٹھاتے ہیں۔

لوگوں سے کام نکالنا

اللہ کس کو زیادہ دیتا ہے

انسان زمینی مخلوق؟

 شاطر لوگ

            اب یہ لوگ دھیرے دھیرے آپ کا بھروسہ جیتتے ہیں۔ مثلاََ پہلے آپ کے ساتھ تعلق بنائینگے پھر دوستی پھر آپ کو چائے بھی پلائینگے۔  اور کبھی کسی کو ایک روپیہ نہ دینے والے آپ کے سامنے سو پچاس روپیہ دیدینگے۔ تاکہ آپ کا بھروسہ جیت جائیں پھر ایک دن آپ کو کوئی کاروبار یا انویسٹ منٹ پلان بتائینگے اور سبز باغ دکھائینگے۔ اب آپ پہلے ہی اس پر بھروسہ کرنے لگ گئے ہیں تو ان کے پلان پر جس میں پیسہ بھی نظر آرہا ہے تو آمادہ ہوجائینگے پھر آپ کو اپنا پیسا اور وہ آدمی دونوں کہیں نظر نہیں آتے۔

اپنے بارے میں جانیں

             یہ سب سے اہم وجہ جانی جاتی ہے۔ یعنی آپ اپنے بارے میں جاننے کیلئے دوسروں کے محتاج ہوتے ہیں۔ جیسے آپ کوئی کام کرسکتے ہیں لیکن کوئی آپ سے آکر کہہ دے کے آپ سے یہ کام نہیں ہوگا۔ تو آپ کا اعتماد ایک دم کم ہوجائیگا اور آپ سوچنا شروع کردینگے کہ شاید یہ شخص ٹھیک کہہ رہا ہے۔

             اسی طرح آپ طاقتور ہیں لیکن کوئی آپ سے کہے کہ آپ اتنا وزن نہیں اٹھاسکتے تو آپ اگر اس کی بات پر یقین کرلیتے ہیں تو یہ اس بات کی نشانی ہے کہ آپ اپنے بارے میں کم جانتے ہیں۔ اور ضرورت ہے اس بات کی کہ آپ لوگوں کی باتوں کی بجائے اپنے آپ پر یقین رکھیں۔اور اپنے بارے میں جانیں اور کسی جگہ بیٹھ کر کبھی کبھار اپنے بارے میں اور لوگوں کی باتوں میں تجزیہ کرلیا کریں۔

 

لوگوں سے کام نکلوانا   logon se kam nikalwana

لوگوں سے کام نکلوانا   logon se kam nikalwana

              دوستو کبھی آپ کے ساتھ بھی ایسا ہوا ہوگا کہ لوگوں نے آپ سے کوئی کام کروالیا ہو پھر بعد میں آپ کو احساس ہوا ہو کہ یہ مجھے نہیں کرنا چاہئے تھا۔ یا اس کے بدلے پیسے لینے چاہئے تھے؟ لوگ ایسا کیسے کرتے ہیں اور یہ آپ بھی کرسکتے ہیں۔ اس کے کچھ نفسیاتی حربے ہیں جو لوگ استعمال کرتے ہیں۔ جنہیں میں یہاں ذکر کرنا چاہتا ہوں۔

            یہ مضمون دھیان سے پڑھیں تاکہ لوگ آپ کا فائدہ نا اٹھا سکیں اور آپ ان سے ہوشیار رہیں۔ 

کیا آپ میری مدد کرینگے؟

             اگر آپ کو کسی سے کوئی کام کروانا ہو تو آپ یہ نہ کہیں کہ میرا یہ کام کردو۔ کیونکہ اس میں سامنے والے کو اپنی اہمیت کا احساس نہیں ہوتا اور وہ  اس سادہ جملے پر زیادہ متاثر نہیں ہوتا کیونکہ اس میں اس کی انا یا بڑے پن کی تسکین نہیں ہورہی ہے۔بلکہ وہ اس کو حکم بھی سمجھ سکتا ہے جو کسی طرح بھی مناسب نہیں آپ کو اپنا کام نکلوانے کیلئے اس لئے آپ یہ سادہ جملہ نہ استعمال کریں۔

            لیکن جب آپ یہ کہتے ہیں کہ آپ میری اس کام میں مدد کردیینگے؟ تو ان الفاظ میں وہ اپنے بڑے پن کا احساس ڈھونڈلیتا ہے اور اس کی انا کی تسکین ہوتی ہے پھر وہ یہ سمجھتا ہے کے اس طرح وہ آپ کے سامنے اپنے بڑے پن کا احساس برقرار رکھ پائے گا۔ بس اسی وجہ سے وہ آپ کا کام کرنے پر تیار ہوجائیگا۔

بڑا مطالبہ کرنا

            کبھی آپ کو کسی سے کچھ مانگنا پڑجاتا ہے جیسے آپ کو اپنی امی یا ابو سے پیسے نکلوانے ہیں تو ہمیشہ بڑا مطالبہ سامنے رکھیں۔ جیسے آپ کو دس ہزار کی ضرورت ہے تو آپ بیس ہزار کا مطالبہ کریں۔ اس سے فائدہ یہ ہے کہ پھر ان کو آپ اپنی مطلوبہ رقم پر آسانی سے لاسکتے ہیں۔ کہ چلیں بیس نہیں تو دس ہی دیدیں۔

              اس طرح آپ اپنے مطالبے کا ذہن آرام سے بناسکتے ہیں۔ یاد رہے یہ سب ٹرکس ہیں جو آپ کو اپنے حساب سے اچھے کرنی ہیں تب ہی انکا رزلٹ نظر آئیگا۔ اگر ذرا بھی سامنے والے کو شک ہوا تو وہ آپ کا مطالبہ نہیں مانیگا۔

لوگوں سے باتیں یا راز لینا

            یہ تو آپ نے سنا ہوگا کہ جو زیادہ بولتا ہے وہ زیادہ غلطیاں کرتا ہے۔یعنی جب آپ کبھی کسی وجہ سے جذباتی ہوجاتے ہیں یا جوش میں آجاتے ہیں تو وہ باتیں بھی کرجاتے ہیں۔ جو بعد میں آپ کو لگتا ہے کہ نہیں کرنی تھیں۔ دوستو اگر آپ زیادہ بولنے کے عادی ہیں تو اپنی اس عادت پر قابو پائیں کیونکہ آپ کی اس عادت کا آپ کے آس پاس اور دوست احباب بہت فائدہ اٹھاتے ہیں۔

            اب اسی طرح آپ کسی سے اس کی باتیں نکلوانا چاہتے ہیں تو آپ کم بولیں اور اس کو زیادہ بولنے دیں۔ درمیان میں کچھ جملے آپ بھی شامل کریں اور اپنے تاثر بلکل نارمل رکھیں جیسے آپ بہت دلچسپی سے اس کی باتیں سن رہے ہیں۔ وہ جوش میں آپ کے سامنے بہت کچھ بول جائیگا اور اسے شک بھی نہ ہوگا۔ اس کو یہ شک نہ ہونے دیں کہ آپ نے کچھ باتیں اس سے نکلوالی ہیں۔ یہ چیز آپ کو اپنے دوستوں اور کاروباری معاملات پر استعمال کرنی چاہئے ۔  جہاں سے آپ کو کچھ معلومات چاہئیں ہوں۔

کام کا دل نہیں تو دس منٹ کیلئے ہی سہی

             یہ ایک ٹیکنیک ہے جس کی مدد سے آپ اپنے کام کو شروع کرسکتے ہیں۔ جیسے آپ کوئی کام کرنا چاہ رہے ہیں لیکن سستی آرہی ہے۔ تو بس اپنے آپ کو سمجھائیں کہ میں بس دس منٹ کیلئے کرونگا۔ پھر وہ کام کرنا شروع کردیں۔ اب اس سے ہوگا یہ کے جو کام آپ کو بور لگ رہا تھا اب اچھا لگنے لگیگا اور دل ہوگا کہ اس کو پورا کرکے ہی اٹھیں۔

             لیکن پھر بھی دل نا کرے تو اٹھ جائیں لیکن اس کو روز دس منٹ کیلئے لازمی کریں یہ اس لئے کہ اس کام کی کم از کم عادت بنی رہیگی۔ ورنہ اس کام سے آپ کا دل بلکل ہٹ جانے کا ڈر ہے۔ کیونکہ عادت بہت سے کام آپ سے کرالیتی ہے۔

اللہ کس کو زیادہ دیتا ہے

ماں بچے کی تربیت کیسے کرے

متاثر کرنے والا بنیں

یقین دلانا

            کبھی ایسا موقع بھی آتا ہے کہ آپ اپنی بات لوگوں سے کہتے ہیں لیکن کوئی یقین کرنے پر تیار نہیں ہوتا۔ تو اس کیلئے ان کو حوالا دیں جہاں سے آپ نے بات سنی یا پڑھی ہے اس سے آپ کو اپنی بات کا یقین دلانے میں آسانی ہوجائیگی لیکن کبھی اوٹ پٹانگ بات کا یقین دلانے یا ناممکن بات کا یقین دلانے کی غلطی نہ کریں  ۔ اور نہ ہی اپنی بات میں جھوٹ کو شامل کریں اور پھر اسکا یقین دلائیں۔ یہ آپ کو آگے چل کر شرمندہ کردیگا اور آپ کی بات کی اہمیت ختم ہوجائیگی۔

لوگوں سے گفتگو کے وقت ان کا نام لیں

             ہماری نفسیات ہے کہ ہم جیسے ہی اپنا نام سنتے ہیں فورا چوکننے ہوجاتے ہیں۔ اور جس نے ہمارا نام لیا ہوتا ہے اس کو توجہ سے دیکھنا اور سننا شروع کردیتے ہیں۔ یہ حربہ آپ لوگوں میں توجہ اور اہمیت کیلئے بھی استعمال کرسکتے ہیں۔ جیسے آپ کسی سے گفتگو کررہے ہیں تو باتوں کے درمیان میں اس کا نام کبھی کبھار لیں۔ اور بڑا ہے تو بھائی وغیرہ کا اضافہ کردیں اس سے وہ آپ کی بات توجہ سے سنے گا۔ کیونکہ ہمیں اپنا نام سننا اچھا لگتا ہے۔

ہلکا احساس کرائیں

             اگر آپ کسی کو ساتھ لگاکر کوئی کام کررہے ہیں ۔ تو آپ اس کو محسوس نہ ہونے دیں کہ  وہ تھکن یا بوریت کا احساس اپنے آپ میں محسوس کرے۔اس کا بہترین طریقہ اس کے ساتھ باتیں کرنا ہے۔ آپ اس کے ساتھ ہنسی مذاق یا اس کی دلچسپی کا کوئی بھی موضوع لیکر باتیں شروع کردیں۔ اس سے وہ نہ بور ہوگا اور نہ ہی تھکن جلدی محسوس کریگا اور نہ وقت گزرنے کا پتہ چلیگا۔

امید ہے میری یہ چھوٹی سی کاوش آپ کو اچھی لگی ہوگی۔ اگر آپ ایسے مضامین چاہتے ہیں تو ہمارے بلاگ پر سبکرائب کرلیں۔ اس سے یہ ہوگا کہ آپ کو نئے مضامین کے نوٹس ملتے رہینگے اور لائک ، شئر کرنا نہ بھولیں۔

            

   

 

متاثر کرنے والا لیڈر inspirational leader in urdu

متاثر کرنے والا لیڈر   inspirational leader in urdu

business
business

            دوستو اگر آپ کاروبار چلاتے ہیں یا کسی کمپنی میں کسی بڑے عہدے پر ہیں۔ آپ کے ماتحت کافی لوگ ہیں تو آپ کے اندر ایسی متاثر کن خوبیاں ہونی چاہئیں کہ آپ کو ماتحت آپ سے متاثر ہوں ۔  آپ کی بات مانیں اور آپ جیسا بننے کی کوشش کریں۔شاہ صاحب کہتے ہیں کہ اگر آپ کے کریکٹر کی غلطیاں آپ کی ٹیم کو پتہ ہیں تو وہ آپ کو فالو نہیں کرینگے۔ اب اس بات کا کیا مطلب؟ کچھ مشکل سی بات لگتی ہے؟

            دیکھیں اگر آپ جھوٹ بولتے ہیں۔ لیکن جھوٹ کے بارے میں اچھی رائے نہیں رکھتے۔ آپ اپنی ڈیوٹی میں ڈنڈی مارتے ہیں لیکن اسے برا بھی سمجھتے ہیں۔آپ بہت سی غلط چیزیں کرتے ہیں لیکن آپ کو پتہ ہے کہ وہ غلط ہیں۔ لیکن آپ یہ سب غلط دوسروں کیلئے سمجھتے ہیں۔ یاد رکھیں آپ کو اپنے آپ کو بہتر لیڈر بنانا ہے تو اپنے کردار کو بنانا پڑیگا اس کے بغیر یہ خواب پورا نہیں ہوسکتا۔جو سب کیلئے غلط ہے وہ آپ کیلئے بھی غلط ہے۔

             اگر آپ خرابیاں صرف آپ کی ذات تک ہیں تو کسی حد تک گزارے لائق ہے۔ لیکن وہ آپ کی کاروباری صلاحیت یا آپ کے منصب کی ذمہ داریوں پر اثرانداز نہ ہو۔ وہ آپ کے کریکٹر کو داغدار نہ کرے جب آپ اپنی ڈیوٹی پر ہوں تو بلکل صاف ہوں۔ سر جی یہ بہت ضروری ہے اچھا لیڈر بننے کیلئے اور یہ آپ کی شخصیت پر ویسے ہی چار چاند لگادیگی۔ 

زبان

             سر جی زبان کی اہمیت آپ جانتے ہیں۔ یہ آپ کی اچھی ہونی چاہئے۔ اچھے اخلاق سے بات کرنا برداشت کرنا اچھی طرح جواب دینا وغیرہ یہ سب آپ کے کردار کو بنارہے ہوتے ہیں۔اور ایک اچھا لیڈر بننے کی طرف آپ کو لیکر جاتے ہیں۔ا ٓپ کو پتہ ہے کہ جاپان میں کوئی شخص جاب شروع کرنے کے بعد اس کو نہیں چھوڑتا اس کی وجہ ان کے باس کا رویہ بھی ہے۔ جس عزت سے باس اپنے ورکر سے بات کرتے ہیں۔ وہ کم میں گزارہ کرلیتا ہے لیکن کام چھوڑکر نہیں جاتا ۔

اخلاص کے ساتھ کام کرنا

             دیکھیں ایک شخص کے ساتھ آپ اچھا کرتے ہیں۔ تو وہ آپ کے ساتھ ہی ہاتھ کرجاتا ہے۔ تو آپ دکھی ہوتے ہیں یا نہیں ہوتے تو انتقام کا سوچتے ہیں۔ یا اس کی دس آدمی کے سامنے برائی کرتے ہیں۔ یہ اس بات کی نشانی ہے کہ آپ اپنی اچھائی کا صلہ اسی سے چاہتے ہیں اللہ سے نہیں یہ ایمان کی کمزوری بھی ہے۔

             یاد رکھیں کہ آپ کا کسی انسان کے ساتھ بدلہ کی  نیت کے بغیر اچھائی کرنا یہ آپ کی شخصیت کو نکھار دیتا ہے۔ پھر اسکے ساتھ یہ بھی یاد رکھیں کے اللہ اس کام کا بدلہ بھی دیتا ہے آپ کو جسکا کا بدلہ آپ کو اس انسان نے آپ کی اچھائی کے باوجود بھی نہیں دیا ہوتا۔ کیونکہ اللہ جانتا ہے آپ کی نیت تو آپ بنا بدلے کی نیت سے کسی کیلئے کام کرتے ہیں تو یہ ایک مشکل کام بھی ہے اور آپ کی لیڈر شپ کیلئے بھی اچھا ہے۔

اللہ کس کو زیادہ دیتا ہے

تخلیقی شخص مار نہیں کھاتا

اچھی صلاحیت والے یا محنت کرنے والے کی آگے بڑھنے میں مدد کرنا

             ایک اچھا لیڈر یا کوچ نظر رکھتا ہے کہ اس کی ٹیم میں کون کس لیول کا ہے اور اس کو کہاں ہونا چاہئے۔ اور اس کام میں اس کی مدد کرتا ہے۔  وہ دیکھتا ہے کہ اس کو اگر اس کام سے زیادہ اس کام میں لگایا جائے تو اور اچھا رزلٹ ملیگا تو وہ اس کو اور اونچے لیول کے کام میں لگادیتا ہے۔

             اب ایک وہ شخص جو کسی کو اپنے سے آگے بڑھتے نہیں دیکھ سکتا وہ اس کو جانتے بوجھتے اسی کام میں رگڑتا رہتا ہے۔ جو ایک اچھے لیڈر کی نشانی نہیں ہے۔  

جناب یہ کچھ باتیں تھیں جو کہنی تھیں اگر اچھی اور کام کی لگیں تو لائک کردیجئے گا۔ اور شئر بھی کردیں تو مہربانی اور میری مدد بھی ہوجائیگی ۔ والسلام

اللہ تعالیٰ کس کو زیادہ دیتاہے allah kisko ziyada deta he

اللہ تعالیٰ کس کو زیادہ دیتاہے 

allah kisko ziyada deta he

            قاسم علی شاہ صاحب کہتے ہیں کہ ایک روایت ہے کہ موسیٰ علیہ السلام اللہ سے بات کرنے جارہے تھے کہ راستے میں ایک شخص مل گیا۔ اس نے کہا کہ یا موسیٰ آپ اللہ سے بات کرنے جاتے ہیں۔ اللہ نے مجھے بڑا دیا اور نوازا ہوا ہے۔ کسی چیز کی کوئی کمی نہیں ہے۔ اللہ کو کہیں کہ اب بس کردے مجھے اتنا کچھ مل گیا ہے کہ اب اور کی ضرورت نہیں ہے۔جتنا مل گیا وہ اوقات سے بھی زیادہ ہے۔بس اب اور نہیں چاہئے۔

             پھر حضرت موسیٰ علیہ السلام اور آگے گئے تو دیکھا ایک شخص خستہ حال میں ریت میں اپنے آدھے جسم کو چھپاکر لیٹا ہوا ہے۔ اس کی حالت سے لگتا تھا کہ وہ بہت بری حالت میں ہے۔ اس نے حضرت  موسیٰ سے کہا کہ آپ اللہ سے بات کرنے جارہے ہیں تو ذرا میری حالت کا بھی ذکر کردیجئے گا۔ میری حالت بھی کچھ بہتر ہوجائے اور میں بھی زندگی اچھی گزاروں تو حضرت موسیٰ نے کہا کہ ٹھیک ہے میں تمہاری حالت بھی ذکر کردونگا۔ 

تخلیقی شخص مار نہیں کھاتا

علم کس کا ہے؟

حرام کھانے کے اثرات

اللہ تعالیٰ نے فرمایا

             پھر جب حضرت موسیٰ اللہ سے بات کرنے پہنچے تو دونوں کی حالت کا ذکر کیا تو اللہ نے کہا کہ موسیٰ جو پہلا شخص تھا جو کہہ رہا تھا کہ مجھے بہت مل گیا ہے اب اور نہیں چاہئے تو اس کو کہو کہ وہ شکر کرنا بند کردے۔ اور جو اپنی حالت پر رورہا تھا اور مانگ رہا تھا اس کو کہیں کہ شکر ادا کرنا شروع کردے۔

             اب جب حضرت موسیٰ پہلے والے کے پاس گئے اور کہا کہ تو شکر کرنا بند کردے۔ تو اس نے کہا کہ میں یہ کیسے بند کردوں ایک یہی شکر تو ہے میرے پاس باقی یہ بھی نہ کروں تو کیا کروں؟ میں شکر کرنا بند نہیں کرسکتا۔ تو آپ نے فرمایا کہ پھر تو غریب نہیں ہوسکتا تیرا رزق زیادہ ہی ہوگا۔

             اب حضرت موسیٰ دوسرے شخص کے پاس پہنچے اور اس سے کہاکہ تو شکر ادا کرنا شروع کردے تو اس نے کہا کہ میں کس چیز کا شکر ادا کروں میرے پاس تو کچھ ہے ہی نہیں تو اتنے میں ہوا چلی اور اسکا جو حصہ ریت میں تھا وہ بھی باہر آگیا۔ 

شکر کا مطلب؟

            تو حضرت گزارش یہ ہے کہ شکر ادا کریں یہ رزق کو بڑھاتی ہے۔ اور ناشکری رزق کو تنگ کردیتی ہے۔ رزق سے برکت کو اڑادیتی ہے۔قرآن میں بھی یہی ہے کہ شکر ادا کرو رزق میں اضافہ ہوگا۔ اب اہم نقطہ جو آپ کو سمجھنا ہے وہ یہ کہ صرف زبان کا شکر نہیں ہے وہ آپ کی ذات میں اور عمل میں نظر آنا چاہئے۔

             اب اس میں یہ ہے کہ آپ اپنے آس پاس کے غریب اور ضرورت مندوں کا خیال رکھیں۔ ذکوٰۃ  اور صدقات  دیں۔علم ہے تو اس کو بانٹیں۔ کچھ کسی کی کسی بھی طرح کی مدد کردیں یا کوئی آسانی پیدا کردیں کچھ بھی کریں لیکن مخلوق کے ساتھ نرمی اور احسان کا معاملہ اللہ کو راضی کرتا ہے۔ اس میں کوتاہی کرنا مناسب نہیں ہے۔بس یہی کہنا تھا اس مضمون میں امید ہے پسند آیا ہوگا اپنی رائے کا اظہار ضرور کیجئے گا۔

 

 

poland tourist visa

 پولینڈ ٹورسٹ ویزا poland tourist visa

poland
poland

             دوستو یہاں پولینڈ میں آپ کے سیٹلمنٹ کے چانسز ہیں اگر آپ چاہتے ہیں۔ اس کی خاص بات کے آپ اس کے ویزے کیلئے بغیر انوٹیشن اور اسپانسر کے اپلائی کرسکتے ہیں کوئی دقت نہیں ہے۔ اس کی ایک اور خاص بات کے آپ اگر ٹورسٹ ویزا پر پولینڈ گئے ہیں تو آپ چاہیں تو اس کو کسی اور ویزا میں کنورٹ کراسکتے ہیں۔ جیسے ورک ویزا،بزنس ویزا یا اسٹوڈنٹ ویزا یہ آپ کو اضافی سہولت دستیاب ہے۔

انڈیا منالی میں گھومنے کی جگہیں 

اپلائی کا طریقہ کار اور requirments

            اس کو آپ آنلائن اپلائی کرسکتے ہیں۔ پہلے آپ کو اپوائنمنٹ اور ویزا فارم بھرنا ہوتا ہے۔ان کی ویب سائٹ پر جاکر۔یہاں کلک کرکے پولینڈ کی سائٹ پر جائیں  اور اپلائی کریں۔ یہاں پر فارم میں آپکی ذاتی کچھ معلومات پوچھی جائینگی۔ جو آپ اچھے سے پڑھ کر فل کردیجئے گا۔ اور جانے کی وجہ میں آپ ٹورسٹ سلیکٹ کریں۔ اس کے علاوہ آپ وہاں کہاں اور کس ہوٹل میں ٹھہرینگے اس کی تفصیلات دیسکتے ہیں۔

            اب ہوٹل کی بکنگ بھی آنلائن ہوجاتی ہے یا تو آپ اپنے طور پر سرچ کرلیں ۔یا اس   لنک پر کلک کرکے بھی آپ ہوٹل بک  کرسکتےہیں۔

انڈیا گجرات کے شہر سورت میں اچھی جگہیں

انڈیا گجرات کے شہر سورت میں اچھی جگہیں Gujrat india

             انڈیا کے صوبہ گجرات میں ایک شہر سورت ہے جو قدرتی  حسن کا نمونہ ہے۔ یہاں گھومنے کی اچھی جگہیں ہیں۔جہاں آپ فیملی کے ساتھ جاسکتے ہیں۔

جگدیشچندرا باس ایکورئیم   Jagdishchandra Bose Aquarium

             سورت کے اس ایکورئیم میں پچاس سے زیادہ ایکوریئم ہیں۔ جس میں سو سے زیادہ اقسام کی مچھلیاں ہیں۔ یہاں آپ کو پتہ چلیگا کہ پانی کے نیچے کیا کیا حسن رکھا ہے قدرت نے جو اب تک آپ سے چھپا ہوا تھا۔ 

سورت کیسل   Surat Castle

            سورت کیسل جسے پرانے قلعہ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ اس قلعہ کو سولہویں صدی عیسوی میں بنایا گیا تھا۔ 

ہزیرا Hazira

             سورت شہر سے کچھ دور واقع ہے ہزیرا۔ یہاں کے سمندر کے بیچ پر ننگے پیر چلنے کا اپنا مزہ ہے۔ یہاں ایک بڑی بندرگاہ بھی ہے۔ جو دیکھنے سے تعلق رکھتی ہے۔ جہاں باہر سے سامان آتا ہے۔

گوپی تلو   Gopi Talav

            سورت کے شہر میں یہ ایک خوبصورت تالاب ہے جو اپنی مثال آپ ہے۔یہاں کا حسین منظر آپ کو یہاں سے آنے سے روک دیگا۔ 

سردار پٹیل میوزیم   Sardar Patel Museum

           یہ میوزیم سورت کی پہچان بھی ہے جو سو سال سے پرانا ہے۔ یہاں بھی آپ کو کچھ نیا دیکھنے کو ملیگا میوزیم کے شوقین یہاں جاسکتے ہے۔ 

سرتھانا پارک اور چڑیا گھر   Sarthana Nature Park and Zoo

             یہ ایک خوبصورت پارک اور چڑیا گھر ہے۔ جو اکیاسی ایکڑ پر پھیلا ہوا ہے۔ اس پارک کے کنارے سے ایک ندی بھی گزرتی ہے۔ جو اچھا منظر پیش کرتی ہے۔

تخلیقی شخص مار نہیں کھاتا

انڈیا بہار میں تفریح

خطرناک سیاحتی مقامات

سائنس سینٹر   Science Centre

             یہ آپ کو سورت کے جدید چہرے سے آشنا کراتا ہے۔ جہاں آپ کو سائنس سے جڑے بہت سے سوالوں کے جواب مل جائینگے۔ اس کا گیلری سیکشن دیکھنے والا ہے۔

سنی ریشمی بوٹینکل گارڈن   Sneh Rashmi Botanical Garden

             یہ یہاں کا سب سے مشہور پکنک پوائنٹ ہے۔ جہاں آپ کو ضرور جانا چاہئے اگر آپ سورت جاتے ہیں تو۔۔۔۔

دماس بیچ   Dumas Beach

            یہ بھی ایک بہترین جگہ ہے یہاں گھومنے کی جو شہر سے دور پرسکون علاقے میں ہے۔ یہاں کی ٹھنڈی ہوائیں آپ کو یہاں کا دیوانہ کردینگی۔ 

            اس کے علاوہ یہاں اور بھی جگہیں ہیں۔ جو دیکھنے سے تعلق رکھتی ہیں جو آپ وہاں جائینگے تو جانکاری مل جائیگی۔