GPU turbo کیا ہے؟

GPU turbo کیا ہے؟

             دوستو ابھی کچھ عرصے سے کچھ کمپنی نے اپنے فونز میں  GPU turbo نام سے ایک سروس شروع کی ہے جسے سن کر لگتا ہے کہ اس سے موبائل کی اسپیڈ میں کافی فرق پڑیگا۔ اور موبائل بہت تیزی سے کام کرنا شروع کردیگا۔ لیکن یہ ہوگا کیسے؟ اسی پر آج بات کرلیتے ہیں۔یہ کیا ہے کیسے کام کرتا ہے ۔

            پہلی بات یہ کہ یہ سچ ہے کہ اس سے اسپیڈ ملتی ہے۔ لیکن یہ کیا ہے اور یہ آج سے پہلےہم نے استعمال کیوں نہیں کیا؟سب سے پہلے اسکا نام ایسا ہے کہ ہمیں لگتا ہے یہ کوئی ہارڈوئیر ہے لیکن نہیں یہ ایک سافٹ وئیر کی فام ہے۔ huawei  کے کچھ فونز میں اسکی اپڈیٹ آرہی ہے جس میں یہ جی پی یو کا فیچر شامل ہوگا اور آپ کے پاس اگر ہواوی کا فون ہے تو آپ اس اپڈیٹ کو انجوائے کرپائینگے۔ 

             دوستو یہاں بتانے جیسا زیادہ کچھ نہیں ہے ہاں خاص کر جو موبائل میں گیمز کھیلنے کے شوقین ہیں ان کیلئے یہ اچھی چیز ہے کہ جب آپ گیمز کھیلتے ہیں۔ تو آپ کو گیم کبھی کبھی کچھ اٹکا ہوا چلتا محسوس ہوتا ہے جیسے وہ سہی سے لوڈ نہیں ہوا یا نہیں ہورہا ۔ تو بنیادی طور پر ٹربو کا یہی کام ہوگا کے آپ کے گیم یا پھر کوئی بڑی ایپ وغیرہ کو زیادہ اچھے اور اسموتھ انداز میں چلائے۔ آپ کو کھیلنا اچھا لگے اور ایک ردھم برقرار رہے۔ ابھی یہ صرف huawei کے پاس ہے اب دیکھتے ہیں کہ کون کون سی کمپنی اس دوڑ میں شامل ہوتی ہیں۔ 

موبائل فون بمقابلہ پلاسٹک بمقابلہ میٹل بمقابلہ گلاس؟

موبائل فون بمقابلہ پلاسٹک بمقابلہ میٹل بمقابلہ گلاس؟

             کیا حال ہے دوستو؟ امید ہے خیریت سے ہونگے۔ آپ موبائل تو استعمال کرتے ہونگے آپ نے اس چیز پر بھی توجہ کی ہوگی کہ آپ کے ہاتھ میں جو موبائل ہے وہ پلاسٹک باڈی ہے یا گلاس یا پھر میٹل باڈی کا ہے۔ اب اس میں کیا بہترین ہے اور کس لحاظ سے بہترین ہے۔ اس پر بات کرلیتے ہیں۔ اب پلاسٹک باڈی سستے موبائل ہیں اور میٹل کے مہنگے اور اگر گلاس کی بات کریں تو وہ اور مہنگے ہیں۔ اب اس میں دیکھنا یہ ہے کہ کمپنیز کس بنیاد پر موبائل کی باڈی منتخب ہیں۔

اب اہم جگہ دو ہیں ایک تو موبائل کا فرنٹ ہے اور دوسرا اسکی باڈی۔ اب اگر فرنٹ کی بات کریں تو وہ زیادہ تر گلاس کا بنایا جاتا ہے۔اب پلاسٹک میں بننے والے موبائل فونز ہر ایک کے بجٹ میں آجاتے ہیں کیونکہ وہ بہت سستے بن رہے ہوتے ہیں۔ لیکن کچھ کمپنیز نے مہنگے موبائل فونز میں بھی پلاسٹک اسکرین دی ہیں۔ اب پلاسٹک دیکھنے اور سننے میں ہلکا تو لگتا ہے لیکن اس کو سستے کی وجہ سے آپ بیکار یا ہلکا نہ سمجھیں کیونکہ پلاسٹک میں کچھ ایسی باتیں ہیں جو پلاسٹک میں ہی دیکھنے کو ملتی ہیں۔ سب سے پہلے یہ کے یہ اگر آپ کے ہاتھ سے گر بھی جائیں تو ان کو کچھ خاص فرق نہیں پڑتا کیونکہ یہ لچک دار ہوتے ہیں۔

اس کے مقابلے میں گلاس ایک مہنگا آئٹم ہے لیکن پلاسٹک کے مقابلے میں پھر بھی نا پائیدار ہے اس کا ڈیمج ہونے کا خطرہ زیادہ رہتاہے۔ اسی وجہ سے بعض کمپنیز نے اپنے مہنگے فونز میں بھی پلاسٹک اسکرین کا استعمال کیا ہے۔ لیکن ایک مسٔلہ ہے کہ پلاسٹک اسکریچ بہت جلدی ہوتا ہے اس کا دھیان رکھنا ہوتا ہے۔ اس لئے پائیداری کے باوجود کمپنیز اب گلاس کو ترجیح دیتی ہیں  یہاں بھی اگر آپ خریدنے سے پہلے ایک چیز پر دھیان دیلیں تو اچھا ہے۔ وہ یہ کہ جو فون آپ لےرہے ہیں وہ نارمل  گلاس کا ہے یا گوریلا گلاس کا؟ کیونکہ گوریلا گلاس عام گلاس کے مقابلے میں کافی مضبوط ہوتا ہے تو ٹوٹنے کا خطرہ کافی کم ہوجاتا ہے۔

تصویریں کیسے بیچیں آنلائن

آئی فونز بمقابلہ اینڈرائیڈ فونز

باڈیز پلاسٹک،میٹل،گلاس؟

             اب باڈیز میں بھی یہ تین چوائسز ہیں آپ کے پاس۔ اب سستی چوائس تو پلاسٹک ہی ہے لیکن وہ ہی بات کے کچھ فائدے آپ پلاسٹک سے ہی لےسکتے ہیں۔جیسے کہ پلاسٹک میں کلر ڈالنا آسان ہے اسی لئے آپ دیکھتے ہیں کہ سستے موبائل فونز زیادہ کلرمیں دستیاب ہوتے ہیں۔ کیونکہ ان میں کلر ڈالنا آسان ہے اسکے علاوہ پلاسٹک میں ایک سب سے اچھی بات کے سگنل ایشو بہت ہی کم ہوتا ہے کیونکہ جتنی آسانی سے سگنل پلاسٹک میں سے گزر جاتے ہیں کسی اور میٹل یا گلاس سے نہیں گزر سکتے۔ 

             اب دوسرا انتخاب میٹل ہے اب یہ بات آپ بھی جانتے ہیں کہ میٹل کا فون ہاتھ میں ہو تو اچھا محسوس ہوتا ہے جو پلاسٹک فون میں محسوس نہیں ہوتا ۔ اور یہ بھی ایک مضبوط مٹیریل ہے جسکا گرنے سے کوئی نقصان نہیں ہے۔ لیکن اس کا ایک بڑا عیب یہ ہے کہ اس میں سے سگنل نہیں گزر سکتے یہی وجہ ہے کہ جب آپ میٹل فون خریدتے ہیں جیسے آئی فون وغیرہ تو ان کے پیچھے کیمرہ کے پاس ایک لمبی لائن جارہی ہوتی ہے یا اس سے ملتا جلتا کوئی اور کام کیا گیا ہوتا ہےیہ اصل میں انٹینا لائن ہیں جو سگنل کیچ کرتی ہیں۔ اور یہ لازمی بنانی پڑتی ہیں میٹل فونز میں۔ اب اگر قیمت کی بات کریں تو یہ بات ظاہر ہے کہ یہ مہنگے ہونگے کیونکہ ان کو بنانا مشکل بھی ہے اور میٹل بذات خود ایک مہنگی دھات ہے۔

            اب بات کرلیتے ہیں گلاس کی جو آجکل ٹرینڈ میں آرہا ہے اور جو ہاتھ میں ایک پریمئم فیل کراتا ہے جو میٹل کے مقابلے اور اچھا لگتا ہے۔اس کا دوسرا اہم فائدہ سگنل پاس ہونے کا ہے اس سے سگنل بڑی آسانی سے پاس ہوجاتے ہیں۔اس ایک اور چیز جو دیکھنے کو مل جاتی ہے وہ ہے وائرلیس چارجنگ یہ فیچر گلاس میں میں بہت آسانی کے ساتھ کام کرتا ہے۔  اسی وجہ سے جب آئی فون 8,10 مارکیٹ میں آئے تو ان کے بیک پر گلاس تھا جو اسی وجہ سے تھا کہ ان فونز میں کمپنی کو وائرلیس چارجنگ فیچر شامل کرنا تھا۔  لیکن اس میں بھی باقی کی طرح ایک بڑا مسٔلہ ہے وہ یہ کہ یہ گرنے پر باقی کی نسبت جلدی ڈیمج ہوجاتے ہیں اس لئے ان کی کیئر باقی فونز کی نسبت زیادہ ہے۔ 

             اب گلاس میں ایک اور عیب بھی ہے وہ یہ کہ اس میں سے ہیٹ پاس آؤٹ نہیں ہوتی ہے جسکی وجہ سے کچھ تھراٹلنگ محسوس ہوتی ہے۔ اس کے مقابلے میں میٹل میں سے ہیٹنگ بڑی آسانی سے کراس ہوجاتی ہے اس سے موبائل کچھ گرم محسوس ہوتا ہے لیکن یہ ٹینشن والی بات نہیں ہے بلکہ اچھی بات ہے کہ ہیٹنگ باہر آرہی ہے اور پراسیسر پر زیادہ لوڈ نہیں ہورہا۔ 

             اب ان ہی باتوں کی وجہ سے کمپنیز بھی کنفیوژ ہوجاتی ہیں بعض اوقات کے کونسا مٹیریل استعمال کیا جائے اس وجہ سے کبھی وہ ایک مٹیریل کی طرف آجاتی ہیں کبھی دوسرے کی طرف اور کبھی تیسرے کی طرف اور یہ سب ایسے ہی چلتا رہتا ہے۔ 

              تو دوستو آج کیلئے بس یہی کچھ تھا پھر کچھ نیا ملتا ہے تو ضرور شئر کرونگا آپ کے ساتھ اب اجازت۔         

آئی فون بمقابلہ اینڈرائیڈ فون

آئی فون بمقابلہ اینڈرائیڈ فون

         قارئین جب  آپ بات کرتے ہیں موبائل لینے کی یا موازنہ کرنے کی تو کنفیوژن سی ہوجاتی ہے کہ کیا  اینڈرائیڈ اچھا ہے یا آئی فون اچھا ہے؟ میں یہاں اسی پر موازنہ کرنے والا ہوں کہ کن خصوصیات میں آئی فون اچھا ہے۔ کن خصوصیات میں اینڈرائیڈ اچھا ہے۔ اس میں ہم پہلے اینڈرائیڈ کو دیکھ لیتے ہیں کہ وہ آئی فون سے کس کام میں بہتر ہے۔ اس میں پہلی چیز جو آتی ہے وہ ہے کسٹمائزیشن[customization] آئی فون میں آپ زیادہ کچھ کسٹمائز نہیں کرسکتے ہیں۔ بس کچھ آئکنز ادھر ادھر کردیں یافولڈر بنالیں وغیرہ۔

         لیکن جب آپ اس کے مقابلے میں اینڈرائیڈ کو دیکھتے ہیں تو آپ کو اس میں بہت آپشن مل جاتے ہیں۔ جیسے آپ وجیٹس لگائیں لانچر تبدیل کریں یا لاک اسکرین بھی تبدیل کرسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ بھی بہت کچھ کرسکتے ہیں۔ آپ روم بھی تبدیل کرسکتے ہیں۔ یعنی جیسا آپ چاہیں وہ کرسکتے ہیں۔ مطلب جو کنٹرول آپ کو اینڈرائیڈ میں ملیگا وہ آئی فون میں نہیں ملیگا۔ پھر ایک اور اہم چیز کے اینڈرائیڈ ڈیوائس آپ کو کم قیمت سے مہنگی قیمت تک مل جاتے ہیں۔ یعنی یہاں بھی آپ کے پاس آپشن ہے کہ آپ کی جیب جو فون برداشت کرسکتی ہے وہ آپ لیسکتے ہیں۔ لیکن آئی فون میں ایسا نہیں ہے وہ آپ کو مہنگا ہی ملےگا۔

اس کو بھی پڑھیں۔۔۔۔

انٹرنیت اسپیڈ کے بارے میں

          پھر آپ اپنے مرضی کے فنکشن والا اینڈرائیڈ فون لےسکتے ہیں۔ مثلا اگر آپ کو فنگر پرنٹ کا آپشن چاہئے تو وہ بھی سستے میں مارکیٹ میں دستیاب ہے۔ اگر آپ کو کیمرہ موبائل میں اچھا چاہئے تو وہ بھی دستیاب ہے۔ یا آپ بیٹری اچھی چاہتے ہیں یا سیلفی کے شوقین ہیں تو یہ سب آپ کو اینڈرائیڈ میں مارکیٹ میں مل جائیگا۔ لیکن آئی فون میں اس پر بھی کافی پابندیاں ہیں  مطلب آپ زیادہ پیسے دیکر بھی اپنی پسند کے آپشن نہیں لے سکتے ہیں جو انہوں نے دیا وہ لینا ہی ہوگا۔ 

         ایک اور چیز جو آپ اینڈرائیڈ فون میں آسانی سے کرسکتے ہیں وہ ہے فائل شیئرنگ۔ آپ فون میں ایک جگہ یا ایپ سے دوسری جگہ یا فون سے باہر کہیں بھی فائل شیئرنگ کررہے ہیں تو آسانی سے کرسکتے ہیں۔ جیسے wifi کا استعمال جتنا آسانی سے اینڈرائیڈ میں ہوسکتا ہے وہ آئی فون میں نہیں ہوسکتا۔

ملٹی ٹاسکنگ

         اس کے بعد ایک اور چیز وہ ہے ملٹی ونڈو یا ملٹی ٹاسکنگ[multi tasking] یہ کام بھی آپ اینڈرائیڈ میں آسانی سے کرسکتے ہیں۔ لیکن آئی فون میں نہیں کرسکتے ہیں۔ دوستو میں نے اینڈرائیڈ کی کچھ زیادہ ہی تعریف کردی ہے۔ لیکن جو سچ ہے وہی بتایا ہے ہاں آئی فون میں ہینگ پرابلم نہیں ہے اسکی اپڈیٹ اچھے سے اور زیادہ عرصے تک ملتی ہے۔ یہ جس طرح کام کرتا ہے جو اسکا پروسیسر ہے وہ کمال ہے ابھی اینڈرائیڈ اس سے کوسوں دور ہے۔

         اس کے علاوہ OTG کا آپشن جسکی مدد سے آپ اپنے فون میں مائک لگاتے ہیں یا اسپیکر لگاتے ہیں یا USB حب لگاتے ہیں یہ سب اینڈرائیڈ میں آسانی سے لگاسکتے ہیں اگر آپ کے اینڈرائیڈ فون میں OTG کا آپشن ہے تو۔ آئی فون میں بھی آپ کو شOTG کا آپشن ملجاتا ہے لیکن اس میں آپ بہت محدود کام کرسکتے ہیں، اینڈرائیڈ کی طرح فری یوز نہیں کرسکتے ہیں۔ دوستو آپ کو کافی معلومات مل گئی ہوگی اور اب آپ آسانی سے فیصلہ کرپائینگے کہ آپ کو آئی فون لینا ہے یا اینڈرائیڈ فون؟ کیا خیال ہے؟۔۔۔۔