محنت کاصلہ ضرور ملتا ہے mehnat ka sila

محنت کاصلہ ضرور ملتا ہے mehnat ka sila

            دوستو آج کا موضوع بھی بڑا دلچسپ ہے جو بہت سی کنفیوژن دور کردیگا آپ کی محنت کے حوالے سے۔ یاد رکھنے کی بات یہ ہے کہ  اللہ محنت کبھی ضایع نہیں کرتا وہ محنت کا صلہ ضرور دیتا ہے۔ اب اس کی شکلیں مختلف ہوسکتی ہیں۔ جیسے میٹرک میں اگر نمبر محنت کے حساب سے نہیں آتے تو اس میں پریشان نہیں ہونا چاہئے کیونکہ ہوسکتا ہے اللہ آپ کو اس کا صلہ آگے چل کر کسی اور شکل دینا چاہتا ہو جو آپ کیلئے زیادہ بہتر ہو۔اس لئے جلد بازی اور غم کرنا سہی نہیں بلکہ یہ موقع صبر کا ہے۔

             اللہ تعالیٰ آپ کی محنت کا صلہ برکت کی شکل میں بھی دیتا ہے جو نمبر کم ہونے کے باوجود بھی آپ کو زیادہ کامیابی دلاتا ہے۔بس آپ کو یہ یقین رکھنا ہے کہ اللہ کے نظام میں آپکی محنت ضایع نہیں جاتی۔ وہ اس کو بڑھاکر واپس کرتا ہے۔یاد رکھیں زیادہ نمبر اور کامیابی ذہین کے حصے میں نہیں بلکہ محنت کرنے والے اور پختہ یقین والے کے حصے میں آتی ہے۔محنت کرنے والے کو کسی بات کا ڈر یا غم نہیں ہونا چاہئے۔ بلکہ اس کو مطمئن ہونا چاہئے کیونکہ محنت کرنے والا جسم و جان بذات خود اللہ کا انعام ہے۔ 

کامیاب لوگوں کی عادتیں

اپنا اعتماد کو کیسے بڑھائیں

اپنی ذات کی خوبیاں

آپ کا ایمان اور آپ کی کامیابی

            آپ کا ایمان اور یقین آپ کی کامیابی میں اہم کردارادا کرتا ہے۔ آپ کے پاس جو اختیار ہے وہ بہت طاقتور ہے اس کو استعمال کرکے آپ بہت کچھ کرسکتے ہیں۔آپ کو جو خواب دیکھنا ہے دیکھیں اور اللہ پر ایمان اور یقین رکھیں کہ وہ آپ کے خواب کو آپکی محنت کے بل بوتے ضرور پورا کریگا۔

             مثال بننا زیادہ بہتر ہے یا جو کامیاب ہوگیا ہے اس کی مثال سننا زیادہ بہتر ہے؟ یقینن مثال بننا زیادہ بہتر ہے تو آپ محنت کو اپناکر مثال بن سکتے ہو۔تاکہ آپ کی کایابی کی مثال لوگ دیں اور  آپ کی کامیابی کی کہانی لوگ سننا چاہیں۔ ایسی کامیابی آپ کو حاصل کرنی ہے۔

            ایک نقطہ آپ اپنے ذہن میں صاف کرلیں کہ زیادہ ذہین کامیابی کی علامت نہیں ہے یہ تحقیق سے ثابت ہے کہ ذہانت سے زیادہ محنت کامیابی کیلئے ذمہ دار ہے۔ اس لئے یہ کوئی معنیٰ نہیں رکھتی کے آپ ذہین ہیں یا عام ذہانت رکھتے ہیں۔

             اگلی بات یہ کہ خدمت کرنا سیکھیں جو انکساری اورخدمت گار نہیں بنتا وہ کامیابی سے دور ہوجاتا ہے۔ اس لئےآپ کبھی خانقاہ گئے ہوں تو آپ نے دیکھا ہوگا کہ وہ نئے آنے والے جو کچھ سیکھنے آتا ہے اس کو خدمت کے کام پر لگاتے ہیں۔ تاکہ اس کے اندر کی ’’میں‘‘ کو ماریں اور اس کو جھکنا سکھائیں یہ بھی ضروری ہے۔ ترقی کیلئے جھکنا،خدمت کرنا اورادب کرنا آپ کو آنا چاہئے۔ 

             

جواب دیجئے