امیر بننے کیلئے کیا ضروری ہے ameer kaise bane

امیر بننے کیلئے کیا ضروری ہے ameer kaise bane

            اگر آپ کا یہ ماننا ہے کہ امیر اور بڑا بننے کیلئے زیادہ علم اور کوالیفکیشن چاہئے تو یہ درست نہیں ہے اور اگر آپ کا یہ ماننا ہے کہ زیادہ تیز دماغ چاہئے تو یہ بھی سہی نہیں ہے۔ مشاہدے میں یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ کبھی زیادہ پڑھے لکھے لوگ زندگی میں فیل ہوتے دیکھے گئے ہیں اور کم پڑھے لیکھے لوگ ترقیوں کی بلندی پر پہنچ گئے ہیں۔ 

             دنیا کے زیادہ تر کامیاب لوگ کم پڑھے لکھے ہیں اور یہاں میں ان کو جو کم پڑھے لکھے ہیں یا ذہن میں اتنے تیز نہیں ہیں ان کوحوصلہ اور راستہ دکھانا چاہتا ہوں۔ تاکہ وہ بھی نئے سرے سے اپنے آپ کو زندگی کی دوڑ میں شامل کرلیں اور کامیابیاں سمیٹیں۔ دنیا کے بڑے بڑے نام جیسے بالی ووڈ کے عامر خان اور سلمان خان یا انڈیا کے کامیاب کاروباری شخصیات اور بہت سے کامیاب کرکٹر جیسے سچن وغیرہ اپنی اسٹدی کو مکمل نہ کرسکے لیکن انہوں نے اس کو اپنی کمزوری نہیں بننے دیا اور اپنے آپ کو اس جگہ پہنچایا جہاں کوئی بہت زیادہ پڑھے لکھے شخص کو ہونا چاہئے۔ 

محنت کا صلہ ضرور ملتا ہے

خطرناک سیاحتی مقامات

              اس میں ایک بات جو اہم ہے وہ یہ کہ زیادہ پڑھے لکھے لوگ زیادہ سوچتے ہیں جب بھی وہ کچھ بڑا کرنے کا پلان کرینگے ان کی تعلیم ان کو ہر زاویہ سے سوچنے پر مجبور کریگی۔ جیسے اگر ناکام ہوگیا تو کیا ہوگا یا بڑا فیصلہ ہے تھوڑا تحقیق کرنی چاہئے یا اس میں تو پہلے ہی اتنے لوگ کام کررہے ہیں تو میرے چانسز بہت کم ہیں کامیاب ہونے کے وغیرہ وغیرہ۔

             اس کے مقابلے میں کم پڑھا لکھا تھوڑا کم سوچے گا کیونکہ اس کے پاس سوچ کے زیادہ زاویے ہی نہیں ہیں تو وہ فورا ایکشن لیگا اور نتیجہ ایکشن سے ہی نکلتا ہے۔ اس بات سے بہت لوگوں کو اختلاف ہوسکتا ہے کہ میں شاید پڑھائی کے خلاف ہوں۔ ایسا نہیں ہے بھائی میں بس ایک نظریہ اور تحقیق بتارہا ہوں۔ اور جن کا مقصد کسی بڑی پوسٹ پر پہنچنا ہے جہاں کوالیفکیشن ریکوائرڈ ہے تو ان کیلئے تو پڑھائی ہی ضروری ہے اور یہ ہی ان کی کامیابی ہے۔ یاد رکھیں جناب ہر ایک کی نظر میں کامیابی کی تعریف الگ ہوتی ہے۔

جواب دیجئے